The news is by your side.

Advertisement

امریکی ویزے کے خواہش مند افراد کو اب سوشل میڈیا اکاؤنٹس کی تفصیلات دینا ہونگی

واشنگٹن : امریکی ویزے کا حصول مزید مشکل ہوجائے گا۔۔۔امریکی ویزے کیلئے امیدوار کو سوشل میڈیا اکاؤنٹس اور ای میل کاپاس ورڈ بھی دینا ہوگا، ٹرمپ انتظامیہ نے نئے قوانین کی منظوری دے دی۔

امریکی میڈیا کے مطابق ٹرمپ انتظامیہ نے نئی ویزہ پالیسی کے تحت نیا سوالنامہ جاری کردیا ہے، ویزہ کیلئے درخواست دینے والے کو ان سوالات کا جواب دینا ہوگا اور انہیں فیس بک، ٹوئٹر سمیت سوشل میڈیا اکاؤنٹس کے یوزرنیم اور پاس ورڈ دینا ہونگے۔


ضرور پڑھیں: پاکستانیوں کو امریکی ویزا ملنے میں‌ 40 فیصد کمی، بھارتیوں کے لیے اضافہ


اس کے علاوہ امیدوار کو اپنے متعلق پندرہ سال تک کی معلومات بھی دینا ہوگی۔

ٹرمپ انتظامیہ نے نئی ویزہ پالیسی کی منظوری تیئس مئی کو دے دی تھی تاہم نئی پالیسی کے تحت سفارتخانہ یا قونصل خانہ امیدوار سے گزشتہ پانچ سال کے دوران سفر، رہائش، نوکری، فون نمبرز اور ای میل ایڈریس کی تفصیلات بھی طلب کرسکتے ہیں۔

امریکی محکمہ خارجہ کے حکام کا کہنا ہے کہ نئی ویزہ پالیسی کا مقصد امریکا میں ممکنہ دہشتگردوں کی آمد کو روکنا ہے، ٹرمپ انتظامیہ نئے نئی ویزہ پالیسی کی منظوری چھ ماہ کیلئے دی ہے، عموماً ایسے قوانین کی 3برس کے لیے منظوری دی جاتی ہے۔


مزید پڑھیں : امریکا آنے والوں کوسوشل میڈیا اکاؤنٹس کا پاس ورڈ دینا ہوگا


یاد رہے کہ رواں سال فروری میں  امریکی ہوم لینڈ سیکریٹری جان کیلی نے کہا ہے کہ امریکا کا دورہ کرنے والے لوگوں پر کڑی نظر رکھنے کے لیے ٹرمپ انتظامیہ ویزا درخواست دینے والوں کو سوشل میڈیا اکاؤنٹس کی تفصیلات اور پاس ورڈز دینے کے احکامات کی تیاری کررہی ہے۔

انکا کہنا تھا کہ امریکا آنے کے خواہش مند ویزا درخواست کے ساتھ سوشل میڈیا پر موجود اپنے تمام اکاؤنٹس اور پاس ورڈ کی تفصیل فراہم کرے گا جس کی امریکی ادارے مکمل چھان بین کریں گے تاہم ضروت کے مطابق اُن کی پرائیویٹ چیٹ بھی پڑھی جائے گی۔

یاد رہے کہ ڈونلڈ ٹرمپ نے اقتدار سنبھالتے ہی 7 مسلم ممالک کے شہریوں پر امریکا میں داخلے پر پابندی لگائی تھی جو عدالت کے حکم کے بعد تاحال معطل ہے۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں