The news is by your side.

Advertisement

بھارت میں اب کیا ہونے جارہا ہے؟ کسانوں کو تیار رہنے کا حکم

نئی دہلی: بھارتیہ کسان یونین کے ترجمان راکیشن ٹکیت نے کسانوں‌ کو مستقبل سے متعلق خبردار کرتے ہوئے کہا ہے کہ وہ ہر قسم کی قربانیوں کے لیے تیار ہیں۔

غیرملکی خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق کسانوں کی ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے راکیشن ٹکیت کا کہنا تھا کہ حکومت کی جانب سے لائے گئے 3 زرعی قوانین سے کسانوں کی تباہی ہوگی، ہم اپنے خاندان اور ذات کے بجائے ملک کے چند سرمایہ داروں کے مزدور بن کر رہ جائیں گے۔

bhartiya kisan union leader rakesh tikait address mahapanchayat in lakhnaur uttar pradesh

انہوں نے کہا کہ ملک میں اپوزیشن ناکام ہوچکی ہے اس لیے حکومت اپنی مرضی کے فیصلے کررہی ہے۔

بھارتیہ کسان یونین کے ترجمان کا کہنا ہے کہ تین ماہ سے جاری کسانوں کی تحریک کوئی عام نہیں، کسانوں کو ہر قسم کی قربانیوں کے لیے تیار رہنا ہوگا، قوانین کی واپسی کے علاوہ کوئی اور چارہ حکومت کے پاس نہیں ہے۔

بھارتی کسانوں کا مودی حکومت کیخلاف ایک اور بڑا فیصلہ

تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ کسان پورے ملک میں جائیں گے اور کالے قوانین سے آگاہ کریں گے، ملک میں لٹیرے گھس آئے ہیں اوروہ ملک کو برباد کرنے میں لگے ہوئے ہیں، ہماری تحریک کمزور ہوگئی تو نوجوان طبقہ بے روزگار ہوجائے گا، اس لیے کسانوں کو ایک ساتھ مل کر جدوجہد کرنا ہوگی۔

انہوں نے کہا کہ حکومت ابھی خاموش ہے، ممکن ہے وہ کسی سازش میں لگی ہو، کسانوں کو تیار رہنا ہوگا۔

راکیشن ٹکیت کا مزید کہنا تھا کہ اپنی زمینیں بچانے کے لیے تحریکی چلانی ہوں گی، حکومت نے آگے بھی کوئی رکاوٹ ڈالی تو اسے ختم کرکے اپنی منزل تک پہنچیں گے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں