The news is by your side.

Advertisement

افغان شہری نے کیسے کراچی کے نوجوان کو تاوان کے لیے اغوا اور قتل کیا؟ سنسنی خیز انکشافات

کراچی : افغان شہری نے کراچی سے 20 سالہ نوجوان کو تاوان کے لیے اغوا کرکے قتل کردیا ، نوجوان کی لاش پشاور میں ٹرک سےبرآمد کرلی گئی۔

تفصیلات کے مطابق کراچی سےلاپتہ نوجوان کی لاش پشاور میں ٹرک سےبرآمد ہوئی ، سچل کےرہائشی 20 سالہ عمر فاروق کودوست نےقتل کیا اور لاش پلاسٹک ڈرم میں بند کرکے ٹرک میں کابل روانہ کردی۔

کراچی کے علاقے سچل سےاغوا20سالہ نوجوان کی لاش پشاور سے برآمد ہونے کے محرکات سامنے آئے، ذرائع نے کہا کہ یکم ستمبر کو 20سالہ نوجوان عمر فاروق اچانک سے لاپتہ ہوا ، جس کے بعد گزشتہ روز پشاور کے حساس ادارے کے ہمراہ مشترکہ کارروائی کی گئی ، کارروائی ٹیکنیکل بنیادوں اور ہیومن سورس کی بنا پر کی گئی۔

کارروائی میں ٹیم کوڈرم میں ہاتھ پیر بندھی اورمنہ پرٹیپ لگی لاش ملی اور تفتیش کےدوران افغان شہری گل رحمان سے متعلق معلومات حاصل ہوئیں ، گل رحمان عمرفاروق کا دوست تھا، جومعمار کمپلیکس سہراب گوٹھ کا رہائشی تھا۔

ذرائع نے بتایا کہ یکم ستمبرکوگل رحمان نےعمرفاروق کو صبح فون کرکے اپنے پاس بلایا اور مبینہ طورپر مزید دوستوں کےہمراہ عمرفاروق کواسی وقت قتل کردیاگیا ، جس کے بعد عمرفاروق کے منہ پرکپڑااورہاتھ پیرباندھ کرلاش ڈرم میں ڈالی گئی اور لاش ڈالنے کے بعد ڈرم کومہندی سےبھر دیاگیاتھا۔

پولیس کا کہنا تھا کہ والدین کیجانب سےفون کرنےپرنامعلوم شخص نےفون اٹھایا اور جھوٹ پرمبنی کہانی بنائی اورکہاکہ عمرفاروق نےایکسیڈنٹ کیاہے، اس کے بعد گل رحمان اسی روزماڑی پورگیااور ڈرم کابل کے لیے بلٹی کروادیا۔

بعد ازاں کچھ روزبعدعمرفاروق کےنمبرسےفون آیا، ایک کروڑتاوان مانگاگیا تاہم سندھ کا قانون نافذ کرنے والا ادارہ تفتیش کا دائرہ کاربڑھاچکاتھا ، پشاور کے حساس ادارے کے ہمراہ کارگو کمپنی میں کارروائی کی۔

حکام نے بتایا کہ ڈرم کوکابل پہنچنے سے پہلےہی ریکورکروالیاگیا ، ڈرم کوکھولا گیا تو 20 سالہ نوجوان کی ہاتھ پیر بندھی لاش برآمدہوئی ، مزید تفتیش پر پتہ چلا کہ گل رحمان افغانستان فرار ہوچکا ہے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ اغواقتل اورتمام معاملات میں گل رحمان کےدیگرساتھی بھی ملوث ہیں ، مرکزی ملزم اوردیگرکی گرفتاری کےلیےکارروائیاں جاری ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں