The news is by your side.

Advertisement

الیکشن کمیشن نے صدر مملکت کو خط کا جواب دے دیا

الیکشن کمیشن نے صدر مملکت کو خط کا جواب دے دیا ہے جس میں کہا گیا ہے کہ شفاف اور غیر جانبدارانہ الیکشن کیلیے 4 ماہ درکار ہیں۔

اے آر وائی نیوز کے مطابق الیکشن کمیشن نے صدر مملکت و خط کا جواب دے دیا ہے جس میں فوری عام انتخابات کرانے سے معذرت کرتے ہوئے کہا ہے کہ شفاف اور غیر جانبدارانہ الیکشن کیلیے 4 ماہ درکار ہیں اس لیے اکتوبر میں ہی الیکشن کا انعقاد ممکن ہے۔

الیکشن کمیشن نے اپنے خط میں کہا ہے کہ حلقہ بندیاں الیکشن کے انعقاد کے لئے کلیدی ہیں لیکن الیکشن کمیشن کے بارہا خطوط لکھنے کے باوجود مردم شماری کی حتمی اشاعت بروقت نہ کی گئی۔

الیکشن کمیشن نے اپنے جواب میں مزید کہا ہے کہ حکومت کی اس تاخیر کو الیکشن کمیشن کے ذمےنہیں ڈالا جا سکتا۔

واضح رہے کہ صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے قومی اسمبلی کی تحلیل کے بعد گزشتہ روز الیکشن کمیشن کو 90 دن میں عام انتخابات کرانے کیلیے خط لکھا تھا۔

مزید پڑھیں: عام انتخابات کی تاریخ مقرر کی جائے ، صدر مملکت کا الیکشن کمیشن کو خط

خط میں کہا گیا تھا کہ آرٹیکل 48 فائیواے،224ٹو کے تحت صدر الیکشن کی تاریخ مقرر کریں گے ، اسمبلی کی تحلیل کے 90 دن کے اندر اندر انتخابات کرانا ہوتے ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں